Page Nav

HIDE

Grid

GRID_STYLE

Pages

بریکنگ نیوز

latest

ملک کی بہتر ہوتی معیشت اور آرمی چیف کا کردار

ملک کی بہتر ہوتی معیشت اور آرمی چیف کا کردار پاکستان کو اپنے قیام سے ہی مختلف مسائل کا سامنا رہا ہے جس میں سب سے اہم داخلی امور سمیت معاشی ...

ملک کی بہتر ہوتی معیشت اور آرمی چیف کا کردار

پاکستان کو اپنے قیام سے ہی مختلف مسائل کا سامنا رہا ہے جس میں سب سے اہم داخلی امور سمیت معاشی معاملات ہیں۔ دیکھی اور ان دیکھی قوتوں نے کبھی پاکستان کو مستحکم نہیں ہونے دیا جس میں وہ کافی حد تک کامیاب بھی ہوئے۔ تاریخ گواہ ہے کہ جب بھی ملک معاشی طور پر خود مختار ہونے کے رستے پر گامزن ہوا تو ان طاقتوں کے پیٹ میں ایسے مروڑ اٹھے کہ جس کی وجہ سے اس سارے نظام کو ہی اکھاڑ دیا گیا۔ کئی سالوں بعد پاکستانی کی فوج کہ سپہ سالار حافظ سید عاصم منیر نے اداروں کے ساتھ مل کر بلاخوف و خطر پاکستان کو ترقی کی شاہراہ پر گامزن کر نے کے لئے ایسی جامع پالیسیاں تشکیل دی ہیں کہ کچھ ہی روز میں معاشی حالات بہتر ہوتے دکھائی دیتے ہیں۔ اس میں شب و روز ان کی کوششیں شامل ہیں حالیہ دورہ مشرق وسطیٰ میں جہاں ان کو سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے رہنماؤں نے پاکستان میں 50 ارب ڈالر کی سر مایہ کاری کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے بلکہ یہ سلسلہ شروع بھی ہو گیا ہے۔ اس کے علاوہ قطر اور بحرین کے رہنماؤں نے بھی پاکستانی معیشت کو مضبوط بنا نے کے لئے اپنے عزم کا اظہار کیا ہے۔

معیشت کی سانسیں بحال کر نے کی خاطر منعقدہ پاکستان منرل سمٹ سے خطاب کرتے ہوئے جنرل عاصم منیر کا کہنا تھا کہ حکومت پاکستان نے تمام اداروں کے ساتھ مل کر سپیشل انویسٹمنٹ فیسیلیٹیشن کونسل (ایس آئی ایف سی) کے قیام کو یقینی بنایا جو کہ تمام شراکت داروں کو ایک پلیٹ فارم پر لاتا ہے، پاکستان کا پہلا منرل سمٹ پاکستان میں ملکی و غیر ملکی سرمایہ کاروں کو آسان کاروبار کے نئے اصول وضع کرتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ہم ایسے سرمایہ کار دوست نظام کو یقینی بنائیں گے جس میں آسان شرائط اور غیر ضروری التواء سے بچا جا سکے، ہمارے ملک میں موجود کان کنی کے وسیع تر مواقع ہیں جو کہ مشترکہ کاوشوں سے عمل پذیر لائے جائیں گے، معدنیاتی پراجیکٹس عوام کی ترقی کا زینہ ہیں۔

جنرل عاصم منیرکا کہنا تھا کہ اپنے ملک پر نظر تو ڈالیں برف پوش پہاڑوں سے لے کر صحراؤں کی وسعت تک اور ساحلی پٹی سے میدانی علاقوں تک اس سر زمین میں کیا کچھ نہیں ہے، ہماری سرزمین بہت سے معدنیات سے مزین ہے اور اس صلاحیت کو مکمل طریقے سے استعمال میں لانے کیلئے ہم بیرونی سرمایہ کاروں کو دعوت دیتے ہیں کہ پاکستان میں چھپے خزانوں کی دریافت میں اپنا کردار ادا کریں۔ اپنے خطاب کے دوران آرمی چیف جنرل عاصم منیر  نے قران کریم کے سورہ بقرہ کی آیت 155 اور 159 کی تلاوت کی جس کا ترجمہ ہے ”اور ہم ضرور تمہیں خوف اور بھوک اور جان و مال و ثمرات سے آزمائیں گے، اُن پر جب کوئی مصیبت پڑتی ہے تو کہتے ہیں بے شک ہم اللہ کی طرف سے ہیں اور ہمیں اُسی کی طرف لوٹ کر جانا ہے“۔ جنرل حافظ سید عاصم منیر نے مزید کہا ہے کہ اگر ہمارا یہ مشترکہ عزم رہا تو پھر آسمان کی بلندیاں ہماری حد اور اسکی وسعتیں ہماری منتظر ہیں، آرمی چیف نے نے قرآنی حوالہ دے کر واضح کیا کہ اللہ ان کی مدد کرتا ہے جو خود اپنی مدد آپ کرتے ہیں۔

یہ جنرل حافظ عاصم منیر کی کاوشیں ہیں کہ اسملنگ کا گھناؤنا کھیل بند ہو چکا، ڈالر و سونے کے ریٹ مسلسل نیچے آرہے ہیں، سٹاک مارکیٹ میں گذشتہ کئی مہینوں سے تیزی دیکھنے کو مل رہی ہے اور پاکستانی روپیہ ترقی کررہا ہے۔ وفاق و صوبوں میں باقاعدہ معیشت کو بہتر بنا نے اور سرمایہ کاری کر نے والے لوگوں کو تحفظ فراہم کرنے اور فوری اور تیز رفتاری کے ساتھ تمام معاملات کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کے لئے کمیٹیاں بھی تشکیل دے دی گئی ہیں۔ مجھے یقین ہے کہ فوج کے سپہ سالار نے جیسے دہشت گردی کے ناسور کو جڑ سے اکھاڑا، پاکستان کی جڑین کھوکھلی کر نے والے مافیاز کو نکیل ڈالی ویسے ہی بحالی معیشت مشن میں بھی انہیں کامیابی حاصل ہو گی اور وہ وقت بہت قریب کہ پاکستان کی ہاں اور ناں میں اقوام عالم کے فیصلے ہو نگے۔ جنرل حافظ عاصم منیر، پوری ا سلامی دنیا کے واحد سپہ سالار ہیں جنہوں نے فلسطین کے حق میں بر ملا اظہار کیا جسے پوری دنیا میں امید کی کرن کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔ انشاء اللہ!!! پاکستان آنے والے دنوں میں پوری امت مسلمہ کی نمائندگی کرے گا اور اس کے لئے قدرت کی جانب سے پاکستان میں ایسے رہنماؤں کو سامنے لایا جائے گا جو حقیقی معنوں میں امت مسلمہ کے ہیروز ہونگے۔

اپنے کالم کا اختتام جنرل عاصم منیر کے پسندیدہ علامہ اقبالؒ کے شعر پر کرتا ہوں:
تیرے دریا میں طوفاں کیوں نہیں ہے
خُودی تیری مسلماں کیوں نہیں ہے
عبث ہے شکوہِ تقدیرِ یزداں
تو خود تقدیرِ یزداں کیوں نہیں ہے

The post ملک کی بہتر ہوتی معیشت اور آرمی چیف کا کردار appeared first on Naibaat.